انتخابتازہ ترین

خلا میں 800 سال بعد نایاب نظارہ، مشتری، زحل قریب ترین فاصلے پر

ماہرین فلکیات کا کہنا ہے کہ مشتری اور زحل کے درمیان فاصلہ کم ہو رہا ہے اور یہ 800 سال بعد ایک دوسرے کے قریب ترین پہنچ جائیں گے۔

ماہرین فلکیات کے مطابق 16 دسمبر سے 25 دسمبر تک یہ دونوں سیارے ایک دوسرے سے اتنے قریب نظر آئیں گے جتنے آج سے 800 سال پہلے دکھائی دیے تھے۔

یہ منظر ان ممالک اور علاقوں میں زیادہ واضح طور پر دیکھا جا سکے گا جو خطِ استوا سے زیادہ قریب ہیں۔ پاکستان بھی انہی ممالک میں سے شامل ہے۔

سورج غروب ہونے کے تقریباً ایک گھنٹے بعد تک مشتری اور زحل کو آس پاس دیکھا جاسکے گا۔ ایسا منظر 24 ویں صدی میں دوبارہ نظر آئے گا۔

ماہرین کے مطابق 16 سے 25 دسمبر تک آسمان میں مشتری اور زحل کا ظاہری فاصلہ پورے چاند کے قطر کے صرف پانچویں حصے یا 20 فیصد کے لگ بھگ ہوگا۔

21 دسمبر کو یہ دونوں سیارے ایک دوسرے سے کم ترین فاصلے پر ہوں گے جبکہ 25 دسمبر کے بعد یہ ایک بار پھر ایک دوسرے سے دور ہونے لگیں گے۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button